صفحہ اول / بلاگرز فورم / اور بھارت کی دھوتی میں پھر آگ لگ گئی

اور بھارت کی دھوتی میں پھر آگ لگ گئی

اور بھارت کی دھوتی میں پھر آگ لگ گئی
از: محمد فہیم شاکر

ایک طرف دہلی میں بھارتی ائیر فورس کے دفتر میں آگ لگی ہوئی ہے جس سے سنٹرل سیکیورٹی ایجنسی کا سب انسپکٹر ہلاک ہوا ہے
(یہ سیکیورٹی ایجنسی بھارتی ایٹمی اثاثوں کی حفاظت پر مامور ہے)
تو دوسری طرف جلال آباد ائیر پورٹ کے قریب راکٹ حملوں کے بعد بڑے دھماکے شروع ہونے سے بیس افراد ہلاک ہو چکے ہیں
سنا ہے کسی نے پاکستان کو جنگ کی دھمکی دی تھی
جس کے جواب میں اس ملک کے وزیراعظم نے پانچ دن جواب دینا مناسب سمجھا اور دنیا کو سمجھایا کہ ہم اس قدر ویلے نہیں کی گدھوں کی دھمکیوں پر کان دھرتے پھریں، جب ہم چاہیں گے تب جنگ شروع ہوگی، اور جہاں ہم چاہیں گے

سنا ہے کسی نے پاکستانی قوم کو چھیڑا تھا
جس کے جواب میں اس قوم نے چھیڑنے والوں کو وہ جگتیں لگائیں کہ الامان الحفیظ

سنا ہے کسی نے مارخور کو للکارا تھا
جس کے جواب میں مشرقی و مغربی جوانب ابھی تک آگ میں جل رہے ہیں اور خود انڈیا کی دھوتی میں بھی آگ لگی ہوئی ہے

سنا ہے کسی نے پاکستانی افواج کی طاقت آزمانے کی غلطی کی تھی
جس کے جواب میں پاکستان ائیر فورس نے انڈیا کو دو جنگی طیارے گرا کر ایک پائلٹ تحفے میں دے دیا اور بھارت کی خوب جگ ہنسائی کروائی اور پاک بحریہ نے انڈین نیوی کی گھس بیٹھی آبدوز کو تلاش کر کے عالمی منظر نامے پر بھارتی رسوائی کو مزید چار چاند لگا دیے
ویسے آپس کی بات ہے کہ بھارتی ائیر سٹرائیکر کو آگ لگنے کے بعد اب بھارتی ائیر فورس کے دفتر میں لگنے والی آگ نے جہاں ایک طرف انڈیا کو آگ بگولہ کر دیا ہے وہیں دوسری طرف دنیا بھر میں انڈیا کو ننگا کر دیا ہے کہ
*ان تلوں میں تیل نہیں*
اور دنیا نے مان لیا ہے کہ پاک فضائیہ کا مقابلہ تو دور کی بات سامنا کرنا بھی بھارتی فضائیہ کے بس کی بات نہیں

(تحریر ہذا کے جملہ حقوق بحق راقم محفوظ ہیں
ادراہ تحریر ہذا کو اپنے نام سے وائرل کرنے والوں کو بارڈر پر جاری جنگ میں لازمی شمولیت پر مجبور کرے گا)
#Pakistan #ISI #PakArmy
#India #Jalalabad
#ThisIsFaheem

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

27اکتوبر، یوم سیاہ

کشمیر ایک ایسی خوبصورت وادی جس کو جنت نظیر وادی کہا جاتا ہے۔ برف سے …

27 اکتوبر یوم سیاہ اور اقوام متحدہ کا کردار

27 اکتوبر کو تمام کشمیری کشمیر سمیت دنیا بھر میں یوم سیاہ کے طور پر …

Send this to a friend