صفحہ اول / اردو ادب / بیٹی کی عصمت ۔۔۔ نعمان علی ہاشم

بیٹی کی عصمت ۔۔۔ نعمان علی ہاشم

جہالت کے زمانوں میں
سنا ہے باپ بیٹی کو
وہ پیدائش پہ بیٹی کی
گھروں سے دور لے جا کر
کہیں پر کاٹ دیتے تھے
یا پھر وہ دور بستی سے
وہ لے کر ساتھ بیٹی کو
زمیں میں گاڑھ دیتے تھے
رسول اللہ نے پھر آ کر
دیا اکرام بیٹی کو
بتا کر شان بیٹی کی
بنا کر آن بیٹی کو
دیا انعام بیٹی کو

مری بستی میں اب لوگو
سنا ہے لوگ کہتے ہیں
جہالت کا زمانہ وہ
کہیں بہتر تھا اس دن سے
یہاں تو بیچ بستی میں
کوئی بھی بھیڑیا آ کر
اٹھا کر گھر سے بیٹی کو
وہ جا کر نوچ کھاتا ہے

جہالت کے زمانوں میں
فقط وہ جسم کھوتی تھی
مگر اس دور میں بیٹی
جگر سے روح سے چھلنی
سجائے خواب آنکھوں میں
ہوس کے ہاتھوں مرتی ہے
جہالت کے زمانوں میں
پکڑ کر ہاتھ میں گڑیا
وہ بابا سنگ جاتی تھی
زمیں میں گاڑھی جاتی تھی

مگر جدت پہ لعنت ہو
کوئی بھی بھیڑیا اٹھ کر
وہ لالچ دے کے ٹافی کا
اسے پھر نوچ کھاتا ہے
اگر وہ جان سے مارے
تو پھر بھی صبر آ جائے
مگر وہ جہل کا وارث
بدن سے روح کو نوچے
حیا کو بے ردا کر دے
ہوس کی آگ کا بندہ
وفا کو ہی تبا کر دے

سنو اے منصفو تم بھی
مرے اے حاکموں تم بھی
تمہارے عہد میں گر یہ
درندے اس طرح آ کر
مری کلیاں اجاڑیں گے
ہوس کے زہر کو پھر یہ
رگ و پے میں اتاریں گے
تو پھر یہ جان لو تم بھی
تمہارے اقتداروں کو
کوئی بھی معجزہ آ کر
وہ دائم رکھ نہیں سکتا
تمہارے کھیت کا خوشہ
کوئی بھی پک نہیں سکتا
کوئی بھی دور تنگی کو
کبھی بھی رکھ نہیں سکتا
سنو جس دور میں بیٹی
سرِ بازار لٹ جائے
سنو اس قوم کے منصف
پہ لازم ہے کہ مر جائے..!


نعمان علی ہاشم
#نعمانیات
#Justice4Farishta

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

معاشرے میں بڑھتا بگاڑ، ذمہ دار کون؟؟؟ زین اللہ خٹک

موجودہ دور میں ہر جگہ بگاڑ ہے۔ عام آدمی سے لیکر اعلیٰ سطح تک ہر …

منزل ڈھونڈ لے گی ہمیں (آپ بیتی) ۔۔۔ ام ابیہا صالح جتوئی

عائشہ ایک بہت ہی بااخلاق اور بہت سی خصوصیات کی حامل چھوٹی سی بچی تھی۔ …

Send this to a friend