صفحہ اول / بین الاقوامی / جب تدبیریں الٹی پڑ گئیں

جب تدبیریں الٹی پڑ گئیں

جب تدبیریں الٹی پڑ گئیں

تحریر : حافظ ابتسام الحسن

 

لو جناب، ہماری جان چھوٹی، پچھلے پانچ چھ دنوں سے انڈین میڈیا نے پاکستان کے خلاف وہ طوفان بد تمیزی برپا کیا ہوا تھا ۔یوں لگ رہا تھا کہ ویسے شاید پاکستان انڈیا کی جنگ ہو یا نہ ہو لیکن انڈین میڈیا کے یہ بربولے اینکر اور اینکرنیاں جنگ کروا کے ہی چھوڑیں گی ۔ان اینکرز کی طراریاں اور کھوکھلا جوش دیکھ کر یوں لگ رہا تھا کہ میدان جنگ سج چکا ہے اور یہ اپنی قینچیوں سے تیز زبانیں اور چانکیائی دماغ لے کر میدان میں موجود ہیں اور عیسائی پادریوں کی طرح ان کا کام میدان جنگ میں خوب آگ بھڑکانا ہے، حیرت تو مجھے ان پھپھے کٹنی اینکرنیوں پر ہے، جو چوہا اور لال بیگ کر یا تو دبک جاتی ہیں یا پھر چیخیں مار مار کر آسمان سر پر اٹھا لیتی ہیں۔ لیکن چینلز پر دیکھو تو تھبا تھبا میک اپ لگا کر پرانی مائیوں والا کردار ادا کرنے پر لگی ہوئی ہیں ۔ایک دفعہ بولنا شروع ہو جائیں تو نان سٹاپ بولے جاتی ہیں، ویلیاں کسے تھاں دیاں ۔

اللہ بھلا کرے محمد بن سلمان کا، جو مسلمانوں کی بھرپور عزت رکھ گیا ۔مودی کی پوری کوشش تھی کہ دو لفظ مطلب کے مل جائیں تو یہ خود کو سچا ثابت کرے اور پھر مظلوم بن کر دنیا کے سامنے روتا پھرے ۔ادھر یہ اینکر اور اینکرنیاں بھی چند منہ پھٹوں کو لے کر تیار بیٹھے تھے کہ جیسے ہی محمد بن سلمان کے منہ سے پاکستان کے خلاف اور انڈیا کی حمایت میں دو لفظ نکلیں یا پلوامہ حملے پر کوئی لفظ نکلے یا فقط لفظ دہشت گردی یا آتنکی نکل جائے تو یہ اپنا واویلا شروع کردیں ۔

لیکن کام تو الٹ ہوگیا، ہمارا ڈرائیور اپنا کام کر چکا تھا اور ہماری دی ہوئی محبتوں کے آگے سب پھیکا پڑ چکا تھا ۔سعودی ولی عہد نے پاکستان کے خلاف تو دور کی بات ہے دہشت گردی ایسا کوئی لفظ بھی نہ بھولا ۔جس سے پورے انڈیا کے سر پہ خاک پڑگئی ۔ بقول ہمارے ایک پاکستانی عالم انڈین میڈیا اور مودی دونوں مودے ہوچکے تھے ۔اب میڈیا تو میڈیا ہے اسے تو کوئی نہ کوئی ایشو چاہیے، جس پر بات کر کے اس کی ٹی آر پی آتی رہے۔ سیاپا یہ بھی ہے کہ مسلسل کوئی ایشو چاہیے ورنہ دوکاندار ی بند ۔اب سعودی شہزادے نے جب مطلوبہ ایشو نہ دیا تو انڈین میڈیا اپنے ہی وزیراعظم کو ایشو بنا کر شروع ہوگیا ۔

تو لیجیے جناب! تب سے مودی قابو آیا ہوا ہے، اور انڈین میڈیا کے اینکر اور اینکرنیوں کے حملے مودی پر بدستور جاری ہیں ۔اور جو گڈا پچھلے پانچ سے سات دنوں سے پاکستان کے خلاف کھودا گیا تھا، اس میں مودی صاحب خود گر گئے ہیں ۔اللہ تعالیٰ نے قرآن مجید میں سچ کہا ہے کہ ” وہ تدبیریں کرتے ہیں تو اللہ بھی تدبیر کرتا ہے، اور اللہ بہترین تدبیر کرنے والا ہے ۔فللہ الحمد

بقلم : حافظ ابتسام الحسن

متعلقہ نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

Send this to a friend