صفحہ اول / اردو ادب / جواب شکوہ بند 7 ۔۔۔ عرفان صادق

جواب شکوہ بند 7 ۔۔۔ عرفان صادق

 

ہاتھ بےزور ہیں،الحاد سے دل خوگر ہیں
امتی باعثِ رسوائیِ پیغمبر ہیں
بت شکن اٹھ گئے،باقی جو رہے بت گر ہیں
تھا ابراہیم پدر اور پسر آزر ہیں
بادہ آشام نئے،بادہ نیا،خُم بھی نئے
حرم کعبہ نیا،بت بھی نئے، تم بھی نئے

⭕کتاب۔ بانگ درا
نظم ۔جواب شکوہ
بند نمبر7

♨مشکل الفاظ کے معنی

الحاد۔ دین سے پھر جانا. بے دینی
خوگر۔۔عادی ۔۔۔پسند کرنے والے
بت شکن ۔ بت توڑنے والے
بت گر۔ بت بنانے والے
پدر۔۔۔باپ
پسر۔بیٹا۔۔۔اولاد
بادہ آشام ۔۔۔شراب پینے والا
بادہ۔ شراب
خم: ۔مٹکا۔۔صراحی۔پیالہ

💢مفہوم۔ حکیم الامت اپنی امت سے فرماتے ہیں کہ میرے نالوں کا میری شکایات کا میرے رب کریم نے یہ جواب دیا ہے کہ اپنی امت کی حالت زار پر غور تو کیجیئے ان کے ہاتھوں میں کوئی سکت باقی نہیں رہی کہ باطل کا مقابلہ کرسکیں۔دل دین سے بےزار ہیں۔دنیاوی متاع کے خوگر ہیں۔یہ امتی تو اپنے نبی صلی اللہ علیہ والہ وسلم کے لیے باعث رسوائی ہیں۔جو اپنی امت کے لیے دین متیں لائے وہ امت آج اس دین سے نالاں ہے۔ اولاد حضرت ابراھیم علیہ السلام آزر کے نقش قدم پر رواں دواں ہے۔شراب۔۔جام۔۔۔کعبہ۔۔بت سب نئے تلاش کرلیے۔
اسلام کی ٹھنڈی چھاؤں کو ترک کرکے آلائش آرائش کے تپتے صحرا میں پناہ لےلی۔افسوس کہ جس امت کے لیے آپ جھگڑ رہے ہیں اسے اب اپنے دین کا کوئی پاس نہیں۔وہ دین کو ترک کرکے دنیا کوترجیح دے چکی ہے۔

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

نوائے اقبال (4) از عرفان صادق

یہ کوئی دن کی بات ہے، اے مرد ہوش مند! غیرت نہ تجھ میں ہو …

نوائے اقبال (2) از عرفان صادق

کتاب۔بانگ درا نظم ۔ظریفانہ نظم نمبر۔ 2 لڑکیاں پڑھ رہی ہیں انگریزی ڈھونڈ لی قوم …

Send this to a friend