صفحہ اول / جویریہ چوہدری / سلسلہ امہات المؤمنین: حضرت خدیجہ رضی اللّٰہُ عنھا۔(حصہ 1)

سلسلہ امہات المؤمنین: حضرت خدیجہ رضی اللّٰہُ عنھا۔(حصہ 1)

رسول اللّٰہ کی بیویاں امہات المؤمنین ہیں۔۔۔

ان کی سیرت و کردار تمام مسلمانوں کے لیئے بالعموم اور خواتین کے لیئے بالخصوص مشعل راہ ہے۔۔۔
ہماری حقیقی فلاح اسی بات میں پوشیدہ ہے کہ ہم اپنی ماؤں کی سیرت سے آگہی حاصل کریں اور ان کے عظیم ترین کردار کو اپنانے کی کوشش بھی کریں۔۔۔مگر افسوس کی بات یہ ہے کہ ہم میں سے اکثریت کو اپنی ماؤں کے نام تک بھی مکمل یاد نہیں ہوتے،جبکہ فلمی دنیا کے کرداروں کے لفظ بہ لفظ نام ہمارے حافظے میں موجود رہتے ہیں۔۔۔؟
رسول اللّٰہ صلی اللہ علیہ وسلم کی عائلی زندگی ہماری اصلاح کا بہترین نمونہ ہے۔۔۔بہترین رفیقِ حیات کا نقشہ ہے۔۔۔
اس سلسلہ میں ہم اپنی ماؤں۔۔۔۔امہات المؤمنین کے بارے میں کچھ جانیں گے۔۔۔ان شآ ء اللہ۔
پیارے نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے جب پہلی شادی کی تو آپ پچیس سال کے بھر پور جوان تھے،لیکن آپ نے نکاح کے لیئے جس خاتون کا انتخاب کیا،ان کی عمر چالیس سال تھی۔۔۔
معروف ادیب اور عظیم نعمت خواں مرحوم نعیم صدیقی نے اس بات کو کتنے خوب صورت انداز میں لکھا ہے کہ:
"یہ نوجوان رفیقۂ حیات کا انتخاب کرتا ہے تو مکہ کی نو عمر اور شوخ و شنگ لڑکیوں کو اک ذرا سا خراج نگاہ دیئے بغیر ایک ایسی عورت سے رشتۂ مناکحت استوار کرتا ہے کہ جس کی بڑی خوبی یہ ہے کہ وہ خاندان اور ذاتی سیرت و کردار کے لحاظ سے نہایت اشرف خاتون ہے،اس کا یہ ذوق انتخاب اس کے ذہن،روح اور مزاج کی گہرائیوں کو پوری طرح نمایاں کر دیتا ہے۔۔۔”
ام المؤمنین حضرت خدیجہ رضی اللّٰہُ عنھا مکہ معظمہ میں پیدا ہوئیں،جاہلیت میں آپ کا لقب طاہرہ تھا۔
آپ قریش کے شریف و معزز خاندان سے تعلق رکھتی تھیں۔۔۔
آپ کا اور رسول اللہ صلی اللّٰہ علیہ وسلم کا خاندان ایک ہی تھا۔۔۔یعنی قریش۔
حضرت خدیجہ کا قبیلہ بنو اسد اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ کا قبیلہ بنو ہاشم تھا۔
یہ بات تو سب کو معلوم ہے کہ قریش خاندان عرب میں ممتاز خاندان سمجھا جاتا تھا۔۔۔ام المؤمنین حضرت خدیجہ کے خاندان میں لڑکیوں کی پیدائش کو کئی دیگر قبائل کی طرح برا نہیں سمجھا جاتا تھا بلکہ ان کی پرورش محبت سے کی جاتی تھی۔۔۔
آپ کا گھرانہ تجارت کے پیشہ سے وابستہ تھا۔
آپ کے والد تجارت کرتے تھے اور اپنا مال بیرون ممالک لے جاتے اور وہاں سے سامان حجاز خرید کر لاتے۔
حضرت خدیجہ رضی اللّٰہُ عنھا نے بھی تجارت کو اختیار کیا۔۔۔
آپ محنتی اور امانت دار لوگوں کو اپنا مالِ تجارت دے کر فروخت کرنے بھیجا کرتی تھیں۔۔۔یعنی حضرت خدیجہ کے کردار کی روشنی میں مسلمان خواتین کاروبار کا طریقہ سمجھ سکتی ہیں کہ ام المؤمنین حضرت خدیجہ کس طریقے سے تجارت کرتی تھیں۔۔۔؟
آپ کی پہلے دو شادیاں ہوئی تھیں،اپنے دوسرے شوہر کی وفات کے بعد آپ نے قریش کے کئی سرداروں کے پیغامِ نکاح مسترد کر دیئے۔۔۔
یہاں تک کہ وہ رحمت اللعالمین کے نکاح میں آئیں۔۔۔۔۔(جاری ہے)۔

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

محمد(صلی اللّٰہ علیہ وسلم):ایک عالمگیر شخصیت۔۔۔ !!! بقلم: جویریہ بتول

محمد(صلی اللّٰہ علیہ وسلم):ایک عالمگیر شخصیت۔۔۔ !!! بقلم:(جویریہ بتول۔ انسانیت کے اصول سے انسان ہی …

پانی میں دودھ

بندہ تو شکل وصورت سے بڑا بھولا بھالا اور نیک لگتا تھا،ماتھے پر محراب بھی …

Send this to a friend

Hi, this may be interesting you: سلسلہ امہات المؤمنین: حضرت خدیجہ رضی اللّٰہُ عنھا۔(حصہ 1)! This is the link: https://pakbloggersforum.org/mothers-of-muslims-1/