صفحہ اول / اقبالیات / نوائے اقبال (10) شرح بانگ درا

نوائے اقبال (10) شرح بانگ درا

اصلِ شہود و شاہد و مشہود ایک ہے
غالب کا قول سچ ہے تو پھر ذکرِ غیر کیا
کیوں اے جنابِ شیخ! سُنا آپ نے بھی کچھ
کہتے تھے کعبے والوں سے کل اہلِ دَیر
ہم پوچھتے ہیں مسلمِ عاشق مزاج سے
اُلفت بُتوں سے تو بَرہمن سے بیر کیا!

📚 کتاب۔بانگِ درا

نظم نمبر#10

📝  فرہنگ
مشہود۔نظارہ۔۔۔۔چیز کا ظاہر ہونا
شاہد۔دیکھنے والا
مشہور۔دیکھا گیا
قول۔ کہا
ذکرِ غیر۔اللہ کے سوا کسی دوسرے کا ذکر
شیخ۔مولوی صاحب
اہلِ دیر۔مندر والے یعنی ہندو
برہمن۔ہندو مذہبی پیشوا
اُلفت۔محبت
بیر۔دشمنی

🖋مفہوم:
حضرت علامہ ڈاکٹر محمد اقبال رحمہ اللہ، بڑے طنزیہ انداز میں کہتے ہیں کہ غالب کے بہ قول اللّہ کی ذات، اللّہ کو دیکھنے والے اور اللّہ کی گواہی دینے والے میں کوئی فرق نہیں ہے ۔وحدت الوجود کے عقیدے کے مطابق انسان، یہ کائنات، اس دنیا میں موجود ہر شے اور خدا ایک ہی وجود کی مختلف شکلیں ہیں۔حضرت علامہ ڈاکٹر محمد اقبال رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ اگر غالب کی یہ بات درست ہے تو پھر جو مسلمان بتوں سے عشق کا مظاہرہ کرتے ہیں وہ برہمن سے دشمنی اور بیر کیوں رکھتے ہیں؟ اقبال کے نزدیک ایک طرف ہندو دیویوں سے محبت کا اظہار اور دوسری جانب برہمن سے نفرت درست نہیں ہے۔
اقبال رحمۃ اللّٰہ استفہامیہ انداز میں فرماتے ہیں کہ شیخ صاحب!کیا آپ نے بھی سنا ہے کہ بت خانوں میں رہنے والے کَل کعبے میں رہنے والوں مراد مسلمانوں کو کیا کہ رہے تھے؟؟
ہم عاشق طبیعت رکھنے والے مسلمانوں سے پوچھتے ہیں جب یہ بتوں سے لگاؤ رکھتے ہیں تو پھر ان کو پوجنے والے برہمنوں سے کس بات کی دشمنی ہے۔

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

نوائے اقبال شرح بانگِ درا (ہمالہ بند 6)

آتی ہے ندّی فرازِ کوہ سے گاتی ہوئی کوثر و تسنیم کی موجوں کو شرماتی …

نوائے اقبال شرح بانگِ درا (ہمالہ بند 5)

جنبشِ موجِ نسیم صبح گہوارہ بنی۔۔۔ا جھومتی ہے نشہء ہستی میں ہر گل کی کلی۔۔۔! …

Send this to a friend

Hi, this may be interesting you: نوائے اقبال (10) شرح بانگ درا! This is the link: https://pakbloggersforum.org/nawai-iqbal-10/