صفحہ اول / عرفان صادق / نوائے اقبال (16) شرح بانگ درا

نوائے اقبال (16) شرح بانگ درا

دلیلِ مہرِو وفا اس سے بڑھ کے کیا ہو گی
نہ ہو حضور سے اُلفت تو یہ ستم نہ سہیں

مُصِر ہے حلقہ، کمیٹی میں کچھ کہیں ہم بھی
مگر رضائے کلکٹر کو بھانپ لیں تو کہیں

سنَد تو لیجیے،لڑکوں کے کام آئے گی
وہ مہربان ہیں اب، پھر رہیں نہ رہیں

زمین پر تو نہیں ہندیوں کو جا مِلتی
مگر جہاں میں ہیں خالی سمندروں کی تہیں

مثالِ کشتی بے حس مطیعِ فرماں ہیں
کہو تو بستہ ساحل رہیں، کہو تو بہیں

📚کتاب۔بانگِ درا
نظم: ظریفانہ
نمبر#16

📝فرہنگ :-
دلیلِ مہرِو وفا.محبت اور ساتھ نبھانے کا ثبوت
الفت۔محبت
ستم۔ظلم
سہیں۔برداشت کریں
مُصر ہے۔اصرار کر رہا ہے
حلقہ کمیٹی۔علاقے کا انتظام سنبھالنے والے سرکاری عہدے دار
رضائے کلکٹر۔ضلع کے افسرِ مال کی مرضی
بھانپ لیں۔ جان لینا
ہندیوں۔ہندوستان کے رہنے والے
جا ملتی۔جگہ ملتی
مثالِ کشتی بے حس۔ایک جگہ ٹھہری ہوئی کشتی کی مانند
مطیعِ فرماں۔تابع فرمان،حکم ماننے والے
بستہ ساحل۔کنارے سے بندھے ہوئے
بہیں۔چلیں ،روانہ ہوں

🖋مفہوم:-
زیر نظر اشعار شاعرِ مشرق کی گہری فکر کے آئینہ دار ہیں، فرما رہے ہیں کہ ہماری وفاداری اور محبت کی اس سے بڑھ کر کیا سند ہو سکتی ہے کہ اگر آپ سے محبت نہ ہو تو آپ کے ظلم بھی کیوں کر برداشت کریں۔
ہمارے حلقے کے لوگ اصرار کر رہے ہیں کہ آخر کو تم کمیٹی کے ممبر ہو تمھارا بھی یہ حق ہے کہ تم اپنی رائے کا اظہار کرو مگر ہماری بے بسی کا یہ مُقام ہے کہ ہمیں ڈپٹی کمشنر کی طبیعت اور خواہش کے مطابق ہی سب کچھ کرنا پڑتا ہے۔
حکیم الامت پُرسوز انداز میں کہہ رہے ہیں کہ خدا جانے، کل کی کس کو خبر ہے حاکم کے تیور بدل جائیں آج وقت اچھا ہے حاکم مہربان ہے تو اس سے استفادہ کرو اور اپنی خدمات کی سند حاصل کر لو جو مستقبل میں اولاد کے لیے فائدہ مند ثابت ہو گی۔
ہندوستانیوں کو اگر اس روئے زمین پر رہنے کی جگہ میسر نہیں ہے تو ابھی سمندر کی تہیں خالی ہیں وہاں جا کے رہ سکتے ہیں۔
میں تو ایک بے حس و حرکت کشتی کی مانند تابع فرمان ہوں آپ کے حکم کے مطابق ساحل کے ساتھ لگا رہوں گا اور اگر حکم دیں گے تو اس پر عمل کرتے ہوئے دریا میں بہہ جاؤں گا۔

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

محمد(صلی اللّٰہ علیہ وسلم):ایک عالمگیر شخصیت۔۔۔ !!! بقلم: جویریہ بتول

محمد(صلی اللّٰہ علیہ وسلم):ایک عالمگیر شخصیت۔۔۔ !!! بقلم:(جویریہ بتول۔ انسانیت کے اصول سے انسان ہی …

محمد(صلی اللہ علیہ وسلم)۔۔۔ایک عالمگیر شخصیت۔۔۔ !!!! تحریر: مریم بتول

عالمگیر نبوت کا فرض لیے،ختم نبوت کا تاج سجائے،پیارے نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ …

Send this to a friend

Hi, this may be interesting you: نوائے اقبال (16) شرح بانگ درا! This is the link: https://pakbloggersforum.org/nawai-iqbal-16/