صفحہ اول / عرفان صادق / نوائے اقبال شرح بانگِ درا (ہمالہ آخری بند)

نوائے اقبال شرح بانگِ درا (ہمالہ آخری بند)

ہمالہ! داستاں اُس وقت کی کوئی سُنا
مسکنِ آبائے انساں جب بنا دامن ترا

کچھ بتا اُس سیدھی سادی زندگی کا ماجرا
داغ جس پر غازۂ رنگِ تکلّف کا نہ تھا

ہاں دکھا دے اے تصوّر پھر وہ صبح و شام تُو
دوڑ پیچھے کی طرف اے گردشِ ایّام تُو

📙کتاب: بانگ درا

📖نظم: ہمالہ (آخری بند)

📝فرہنگ:
مسکن: رہنے کی جگہ.
آبائے انسان: انسان کے باپ دادا. گردشِ ایّام: زمانے کا چکر.

✒مفہوم:
نظم کے آخری بند میں شاعرِ مشرق اپنے کلام کو تمام کرتے ہوئے ہمالہ سے یوں مخاطب ہیں کہ”اے ہمالہ! ذرا مجھے اس وقت کا حال تو بتا جب حضرت آدم علیہ السلام نے تیرے دامن میں پناہ لی تھی۔ظاہر ہے کہ تو ان لمحات کا رازدان ہے۔ان ایام کی زندگی کس قدر سیدھی سادی ہوگی جس میں کسی قسم کا تکلف و بناوٹ نہ تھی۔ اے ہمالہ! ذرا ہمیں ان دنوں کے حالات و واقعات اور حقائق سے آگاہ کر۔ کہ وہ لمحات تو ہر طرح کے تکلفات سے نا آشنا تھے“۔ آخری شعر میں شاعر ہمالہ کی خامشی سے مایوس ہو کر خود اپنی تخیلاتی و تصوراتی کیفیت کا سہارا لیتے ہوئے اس سے فرماتے ہیں کہ ان ایام کا نقشہ تم ہی مجھ سے بیان کردو کہ یہ پہاڑ تو آخر خاموش پتھر ہی نکلا جبکہ تم میں یہ صلاحيت موجود ہے کہ گزرے ہوئے ماضی کو پلٹا کر اس کی پوری داستان منظر ِ عام پر لے آؤ۔

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

سفرِ زندگی کے بدلتے موسم۔۔۔ !!!

سردی کی وجہ سے کرسی ذرا دھوپ میں بچھائی اور گرم گرم سورج کی کرنوں …

علامہ محمد اقبال__اسلام کے ترجمان۔۔۔ !!!

علامہ محمد اقبال بیسویں صدی کے ایک عظیم مفکر، شاعر،مصنف،سیاستدان،استاد،قانون دان،اور مسلمانانِ برصغیر کے لیئے …

Send this to a friend

Hi, this may be interesting you: نوائے اقبال شرح بانگِ درا (ہمالہ آخری بند)! This is the link: https://pakbloggersforum.org/nawai-iqbal-hamala-last-stanza/