صفحہ اول / معاشرہ / اصلاح معاشرہ کیسے ممکن……؟ اعظم فاروق

اصلاح معاشرہ کیسے ممکن……؟ اعظم فاروق

آج کل دنیا کے اندر جتنے بھی مسائل موجود ہیں خواہ وہ مہنگائی کا ہو، کرپشن ہو، بے روزگاری ہو، امن وامان کی صورتحال ہو یا کوئی اور مسئلہ ہو سب کا تعلق معاشرے سے ہے اور معاشرے کا تعلق فرد سے ہوتا اگر افراد اچھے ہوں تو ایک بیٹی کی آواز پر لبیک کہتے ہوئے محمد بن قاسم دیبل کے ساحلوں سے لے کر پنجاب کے کھلیانوں تک فتح کے جھنڈے گاڑ دیتا ہے اگر افراد کی تربیت نہ ہو تو اپنی ہی بیٹی کو زندہ دفن کر دیا جاتا ہے.. تو معاشرے کا تعلق افراد سے ہے. افراد ہی بگاڑ کا شکار ہوں تو سوسائٹی کس طرح ترقی کر سکتی ہے افراد کی اصلاح کے حوالے سے کئی چیزیں ہیں لیکن صرف دو چیزوں پر کچھ لکھنا چاہتا ہوں
1-آئیڈیل کیسا ہونا چاہیے
آج میڈیا کا دور ہے دنیا کے ہر کونے تک رسائی ممکن ہے جو سب سے بڑا مسئلہ ہے کہ ہم آج احساس کمتری کا شکار ہیں ہم نے اپنے سسٹم کو دنیا کے اندر ناکارہ ترین سمجھا ہوا ہے. آج ہر دوسرا بندہ مغرب کی اندھی تقلید میں ڈوبا ہوا ہے.. آج ہم مغرب کی کن چیزوں سے مانوس ہیں.. تعلیم، صحت، صفائی، انصاف.. وغیرہ وغیرہ. یہ وجہ ہے جس کی وجہ سے اج ہمارے سیاست دان ہزاروں کے مجمع میں کھڑے ہو کر یورپ کے نظام کی مثالیں دیتا ہے.. ہمارا میڈیا دیوانہ وار مغرب کا پیروکار ہے میں ان سے پوچھنا چاہتا ہوں
وہ کونسا مذہب جس میں صفائی کو آدھا ایمان قرار دیا گیا..
وہ کونسا نبی ہے جس نے کہا میں معلم بنا کر بھیجا گیا ہوں..
وہ کونسا نبی ہے جو یہودی کے بیٹے کی عیادت کو جاتا ہے..
وہ کونسا عادل حکمران ہے جس کی مثال اغیار بھی دیتے ہیں……؟
وہ مذہب اسلام وہ معلم ہمارے پیارے نبی کریم صل اللہ علیہ والہ وسلم، وہ عادل حکمران عمر رضی اللہ عنہ ہیں…..
تو بھائیو: عرض یہ کرنا چاہتا ہوں یہ سب چیزیں آج یورپ نے اسلام کی تعلیمات سے سیکھیں انہوں نے دیکھا کیسے مدینہ کی فلاحی ریاست قائم کی گئی. ہم مسلمان ہیں اور یہ چیزیں تو پہلے ہی ہمارے پاس موجود ہیں لیکن پھر بھی یورپ کی پیروی… آخر کیوں..!؟
تو آئیے آج سب سے پہلے اپنے رہبر ورہنما، رول ماڈل، آئیڈیل کا انتخاب کریں.. اور پھر ان تعلیمات کو اپنے معاشرے میں لاگو کریں. انشاءاللہ ہماری سوسائٹی میں بھی عدل و انصاف ہو گا تعلیم و صفائی کی سہولیات میسر ہونگی
2-شخصیت
اپنے آپ کو حقیر مت جانیں
ہم نے آج اپنے آپ کو اتنا گرا لیا کہ ہمارا یہ خوبصورت بدن چند ٹکوں کے کپڑوں کا، مہنگے جوتوں کی، رولیکس کی گھڑی کے لیے مجبور ہے خواتین کے ہاتھ میں جب تک پچاس ہزار کا پرس نہ ہو ان کی پرسنیلٹی نہیں بنتی. نوجوان نے جب تک اچھی جینز نہ پہنی ہو اسکی پہچان نہیں بنتی، بیوروکریٹ جب تک ٹائی کوٹ نہیں پہنتا اس کا سوسائٹی میں کوئی مرتبہ ومقام نہیں بنتا… یعنی کہ ہماری شخصیت ہمارا سٹیٹس ان چیزوں پر منحصر کرتا ہے.. جس کے پاس یہ چیزیں نہیں اس کا کوئی مرتبہ نہیں…ایسا بلکل نہیں ہے اگر ایسا ہوتا تو نبی کریم صل اللہ علیہ والہ وسلم یتیم پیدا نہ ہوتے غریب پیدا نہ ہوتے، حضرت عمر رضی اللہ عنہ پیوند والے کپڑے نہ پہنتے..
دوسروں کی تہذیب کو فالو نہ کریں اپنا سٹائل دیں دنیا کو .. ہاں دوسروں سے سیکھیں ضرور مگر اس پر عمل اپنی تہذیب کے مطابق کریں.. دنیا کو ایک کردار دیں
عزیز دوستو:اپنے آپ کو قیمتی جانیں ان چیزوں کی کوئی خاص اہمیت نہیں. ان سب سے زیادہ ضروری چیز ہمارا خوبصورت بدن دل ودماغ ہے. جو ان چیزوں سے کئی درجہ بہتر ہے
آئیے نبی کریم صل اللہ علیہ والہ وسلم کی تعلیمات کے مطابق اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوائیے کہ رہتی دنیا تک امر ہو جائے. امید ہے انشاءاللہ یہ دو چیزوں پر اگر غور کیا جائے تو ہمارے معاشرے کے اندر جو بگاڑ ہے کافی حد تک دور ہو جائے گا ہم ذہنی پسماندگی سے باہر نکل کر ملک وقوم کے لیے کردار ادا کریں جب ہمارا کردار بہتر ہو گا تو کامیابی سے آپ کو کوئی نہیں روک سکتا۔

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

نوائے اقبال شرح بانگِ درا ، نظم: عہد طفلی بند 2

تکتے رہنا ہائے وہ پہروں تلک سوئے قمر وہ پھٹے بادل میں بے آوازِ پا …

محمد(صلی اللّٰہ علیہ وسلم):ایک عالمگیر شخصیت۔۔۔ !!! بقلم: جویریہ بتول

محمد(صلی اللّٰہ علیہ وسلم):ایک عالمگیر شخصیت۔۔۔ !!! بقلم:(جویریہ بتول۔ انسانیت کے اصول سے انسان ہی …

Send this to a friend

Hi, this may be interesting you: اصلاح معاشرہ کیسے ممکن......؟ اعظم فاروق! This is the link: https://pakbloggersforum.org/reforms-in-society/