صفحہ اول / جویریہ چوہدری / سلسلہ امہات المؤمنین ( 2) سیدہ سودہ بنت زمعہ رضی اللّٰہُ عنھا (حصہ اول)

سلسلہ امہات المؤمنین ( 2) سیدہ سودہ بنت زمعہ رضی اللّٰہُ عنھا (حصہ اول)

ام المؤمنین حضرت سودہ بنت زمعہ رضی اللّٰہُ عنھا سے پیارے رسول حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت خدیجہ رضی اللّٰہُ عنھا کی وفات کے بعد نکاح کیا۔۔۔

نبی محترم صلی اللّٰہ علیہ وسلم اپنی مونس و غمگسار بیوی کی وفات کے بعدپریشان تھے کہ حضرت خولہ بنت حکیم نے آپ صلی اللہ وسلم کے پاس آئیں اور عرض کی کہ یا رسول اللہ !!!
آپ صلی اللّٰہ علیہ وسلم کو حضرت خدیجہ رضی اللّٰہُ عنھا کی وفات کے بعد کسی ہمدرد رفیقۂ حیات کی ضرورت ہے کیونکہ اس سے قبل تمام گھریلو انتظام و انصرام حضرت خدیجہ کے زمہ تھا۔۔۔
آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی رضا مندی سے حضرت خولہ سیدہ سودہ بنت زمعہ رضی اللّٰہُ عنھا کے والد کے پاس گئیں اور ساری صورتحال سے آگاہ کیا۔۔۔
حضرت سودہ کے والد نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ کی شرافت پر مکمل اطمینان کا اظہار کیا اور سودہ کی رائے معلوم کرنے کو کہا۔۔۔
حضرت سودہ کا نکاح اس سے قبل سکران بن عمرو سے ہوا تھا۔۔۔آپ رضی اللّٰہُ عنھا کے والد کا نام زمعہ بن قیس تھا۔۔۔
ان کا تعلق قریش کی مشہور شاخ بنو عامر بن لؤی سے تھا۔۔۔
سکران بن عمرو حضرت سودہ کے چچا کے بیٹے تھے۔۔۔ان کی وفات کے بعد آپ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے نکاح میں آئیں۔۔۔
اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت خدیجہ کے بعد آپ سے نکاح کیا۔۔۔آپ بڑی عمر کی خاتون تھیں۔۔۔کیونکہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی شادی کا مقصد یہ تھا کہ وہ آپ کی اولاد کا خیال رکھ سکیں اور دوسرا مقصد بیوہ خاتون کی حوصلہ افزائی،حسن اخلاق و غم خواری تھا۔۔۔ !!!!
حضرت سودہ السابقون الاولون میں سے تھیں،آپ نے ابتداء میں ہی اسلام قبول کر لیا تھا۔۔۔ !!!
جن تمام معاملات طے ہو گئے تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نکاح کے لیئے تشریف لے گئے۔۔۔
حضرت سودہ کے بھائی عبد بن زمعہ نے جب یہ بات سنی تواپنے سر میں مٹی ڈال کر واویلا کرنے لگے کیونکہ انہیں اسلام سے سخت عداوت تھی۔۔۔ !!!

حضرت سودہ بنت زمعہ رضی اللّٰہُ عنھا بہت بلند اخلاق کی مالکہ تھیں۔۔۔صدقہ وخیرات کرنا آپ کو بے حد پسند تھا۔۔۔
حضرت عائشہ رضی اللہ عنھا فرماتی ہیں کہ میں نے سودہ بنت زمعہ سے بڑھ کر کوئی خاتون قربانی دینے والی نہیں دیکھی،جب یہ بڑی عمر کی ہو گئیں تو انہوں نے کہا۔۔۔
یا رسول اللہ!
میں اپنی باری آپ کی خوشی کی خاطر بخوشی حضرت عائشہ کو دیتی ہوں۔۔۔ !!!!
آج کی مسلمان خواتین کے لیئے اس بات میں کتنا بڑا پیغام ہے کہ جن کے شوہر اگر کبھی دوسری شادی کر لیں تو گھر میں طوفان برپا ہو جاتا ہے اور سوکنیں آپس میں بولنا تو کیا دیکھنا اور نام لینا بھی گوارہ نہیں کرتیں۔۔۔اور کئی تو دوسری شادی کرنے پر طلاق کا مطالبہ بھی کر بیٹھتی ہیں۔۔۔۔یا پھر مرد بیوی بنا کر گھر لے آنے کی بجائے گھر سے باہر ہی سکینڈل چلاتے ہیں۔۔۔بحیثیت مسلمان ہمیں
ازدواجی زندگی میں اسوۂ رسول سامنے رکھنے کی اشد ضرورت ہے۔۔۔
اور مرد حضرات بھی استطاعت رکھتے ہوئے ہی ایک سے زائد شادیاں کریں کیونکہ استطاعت میں مال و دولت،حکمت و دانش،حوصلہ و صبر اور انصاف سبھی شامل ہیں۔۔۔ !!!!
بصورت دیگر قرآن ایک پر گزارہ کر لینے کی تعلیمِ حسن دیتا ہے۔۔۔ !!!!۔۔۔۔۔۔(جاری ہیں)۔

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

سنیپ چیٹ اسلامی تعلیمات کے آئینے میں

چند دن قبل کچھ پرانے دوست اکھٹے ہوئے۔ کچھ انجینیئرنگ کے سٹوڈنٹس اور کچھ ایم …

محمد صلی اللہ علیہ وسلم ، ایک عالمگیر شخصیت ۔۔۔ رحمت اللہ شیخ

امام الانبیاء حضرت محمدﷺ اللہ تعالیٰ کے آخری پیغمبر اور رسول ہیں۔ اللہ تعالیٰ نے …

Send this to a friend

Hi, this may be interesting you: سلسلہ امہات المؤمنین ( 2) سیدہ سودہ بنت زمعہ رضی اللّٰہُ عنھا (حصہ اول)! This is the link: https://pakbloggersforum.org/the-mothers-of-believers-2/