صفحہ اول / ثناء صدیق / برف زاروں کا شہزادہ

برف زاروں کا شہزادہ

دنیا میں ایک ایسا خطہ موجود ہے جو ساوتھ اشیا کا سوئیزرلینڈ بھی کہلاتا ہے جس کی پریاں اور شہزادے خوبصورتی اور ذہانت کی وجہ سے مشہور ہیں جو خطہ اجکل عالمی تنازعہ کی صورت اخیتار کر چکا ہے جس کو حل کرنے کے لیے دنیا تیار نہیں ہو رہی لیکن اس خطہ پاک کے بارے میں مسلمانوں کا دین اور اس کی تاریخ یہ بتاتی ہے اگر کفار مسلمانوں کی جگہ پر قبضہ کر لیں تو کفار کو نکالنا اور مسلمانوں کا دوبارہ قبضہ بحال کرنا ضروری ہے
ارشاد ربانی ہے
وقتلوھم حيث ثقفتموهم واخرجوهم من حيث اخرجوكم(البقراء191)
انہیں خہاں پاو قتل کر دو جس جگہ سے تمہیں نکالا گیا تم بھی وہاں سے نکال دو
اج پورا ہندوستان کشمیر حیدر آباد مناودر آسام برما بہار اور جونا گڑھ مسلمانوں کی سلطنت تھا جو غیروں کے قبضے میں ہے اسی قبضے کو دوبارہ لینے کے لیے خطہ کشمیر نوجوانوں نے بہت سی قربانیاں پیش کی ہیں اس سلسلہ میں بہت سے گمنام ہیں اور کچھ ہیں جو تاریخ کی نظر ہوئے اور بھارت کی تاریخ میں تاریخ رقم کر گے ان میں ایک مرد مجاہد ابو حنظلہ ہیں جنہوں نے اغیار کے ہاتھوں اپنی زمین دیکھی تو اسے لینے کے لیے پہاڑوں کا رخ کیا جدھر کٹھن ذندگی گزارتے ہوئے انہوں نے دشمن پر کاری وار کیے کہی اپنے ہی علاقے میں رہتے ہوئے اپنی ہی سر زمین میں قید کر دیے گے پھر ابو بصیر رضی اللہ عنہ کی صورت میں کفار کی قید سے نکلنے میں کامیاب ہوئے دوبارہ شیر کی طرح کفار پر ٹوٹ پڑے وہ ایسے نوجوان تھے جنہوں نے کفار ملحدوں کے ظلم و ستم دیکھے تو اپنے خطے میں اپنی مظلوم ماوں اور بہنوں کے لیے نکل پڑے انہوں نے اج کے بے حس مسلمان کی طرح امریکہ فرانس و برطانیہ کے ویزے اور گرین کارڈ نہیں دیکھے انہوں نے دنیا کے لالچ پر اپنی قیمتی جان کا سودا نہیں کیا بلکہ اپنی جان اپنے حق اور اپنے دین و سلام کی خاطر پیش کی اور اس پیش گوئی مصداق بنے "میری امت کا ایک گروہ حق پر غالب رہے گا جو ان کی مخالفت کرے گا جو ان کی مدد چھوڑے گا انہیں کوئی نقصان نہیں پہنچے گا” ان کی عارضی دنیا نبی محسن اور مکرم نبی کی محبت میں اس قدر تھے کہ اسی بنی سے محبت کرنے والی بہن اور بیٹی جس کو دنیا جہاں کے کافر جگہ جگہ نیلام کر رہے ہیں اپنی محبت میں سچے ثابت ہوئے اور اج کے مسلمان کی طرح جھوٹی محبت کے دعوے میں بےحس ہو کر ذلت نہیں مگر عزت کی دنیا اور آخرت پائی لیکن ایک طرف تو ان نوجوانوں کی ذندگیاں ہمارے لیے مشعل راہ ہیں تو دوسری طرف کتنے افسوس کی بات ہے کہ اج کے نوجوان وہ ہیں خنہیں مسلمان جوانوں ماوں اور بہنوں کی قربانیاں نظر نہیں آ رہی جو اپنے مقبوضہ علاقے کو چھڑانے اور اپنے رب کا قانون نافذ کرنے کے لیے اپنی جانیں کٹوائے جا رہے ہیں مگر نصف صدی گزرنے کے باوجود ہماری وجہ سے ہمارا علاقہ ویسے کا ویسے ہی ہے یہ مجبوریاں ہماری کفار کی غلامیوں کی وجہ سے ائی ہے
اللہ تو کہتے ہیں جو لوگ تم سے لڑتے ہیں تم بھی ان کے ساتھ لڑائی کرو
جب کفار مسلمانوں پر حملہ آور ہو جائیں ہمارا لڑنا فرض ہو جاتا ہے لیکن اج ہمارے مقبوضہ کشمیر کے علاقے میں لاکھوں کی تعداد میں ہندو فوج حملہ آور ہیں افسوس ہمارے چند نوجوان ابو حنظلہ جیسے تاریخ رقم کرکے امر ہوتے باقی سب ویسے کے ویسے سوئے ہوئے ہیں اج کے نوجوان کو ابو حنظلہ کی طرح تاریخ رقم کرنا ہے کیونکہ اس کے بہت سی زمین ابھی بھی دشمن کے قبضے میں ہے
اندلس سپین میں ہماری 8 سو سال تک حکومت رہی ہے مگر اب عسائی قابض ہیں اور انہوں نے وہاں ایک بھی مسلمان نہیں رہنے دیا یہ واپس لینا ہماری زمہ داری ہے
کشمیر مسلمانوں کا غیروں کے قبضے میں جس کی خاطر بہت سے نوجوان اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کر گے اور کر رہے ہیں اس کو واپس لینا ہمارا فرض عین بن چکا ہے
فلسطین پر یہودی قبضہ قبلہ اول پنجہ یہود میں اس کے علاوہ سسلی ہنگری قبرص چینی و روسی ترکستان کاشغر سب مسلمانوں کی ملکیت تھے اج سب کفار کے قبضے میں ہیں اس کے علاوہ پیرس سے 90 کلو میٹر فرانس کا علاقہ اور سوئیزرلینڈ کے پہاڑ سب ہمسرے مجاھدین کا مسکن رہے ہیں اور ہمیں پکار رہے ہے قرآن کی اسی آیت کے مطابق
اے مسلمانوں تمہیں کیا ہو گیا ہے تم اللہ کی راہ میں ان بے کس مرد عورتوں بچوں کی حمایت میں کیوں نہیں لڑتے جو کمزور پاکر دبا لیے گے ہیں اور اپنے اللہ سے دعا کر رہے ہیں ہمیں ظالموں کی اس بستی سے نکال اور ہمارے لیے اپنے ہاں سے کوئی حامی و مددگار بھیج دے

متعلقہ محمد نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

سنیپ چیٹ اسلامی تعلیمات کے آئینے میں

چند دن قبل کچھ پرانے دوست اکھٹے ہوئے۔ کچھ انجینیئرنگ کے سٹوڈنٹس اور کچھ ایم …

محمد صلی اللہ علیہ وسلم ، ایک عالمگیر شخصیت ۔۔۔ رحمت اللہ شیخ

امام الانبیاء حضرت محمدﷺ اللہ تعالیٰ کے آخری پیغمبر اور رسول ہیں۔ اللہ تعالیٰ نے …

Send this to a friend

Hi, this may be interesting you: برف زاروں کا شہزادہ! This is the link: https://pakbloggersforum.org/the-prince-of-ice-caps/