صفحہ اول / اسلامک بلاگز / خلیفۂ ثانی حضرت عمر(رضی اللّٰہ عنہ)۔۔۔ !!!!! (قسط:3)۔ جمع و ترتيب : جویریہ چوہدری

خلیفۂ ثانی حضرت عمر(رضی اللّٰہ عنہ)۔۔۔ !!!!! (قسط:3)۔ جمع و ترتيب : جویریہ چوہدری

ایک دفعہ مشک و عنبر آئے۔۔۔

بیوی نے کہا:
مالِ غنیمت آیا ہے،تقسیم کر دیتی ہوں۔۔۔
فوراً کہا:
نہیں ایسا نہیں ہو سکتا ہے۔۔۔۔کیونکہ ایسا کرنے سے تمہارے ہاتھوں خوشبو کا زیادہ حصہ ہماری طرف نہ آئے۔۔۔

کیسے عظیم حکمران تھے۔۔۔؟؟؟

گھر میں حلوہ بنا تو سوال کیا۔۔۔
پیسے کہاں سے آئے ہیں؟
بیوی نے کہا
گھریلو بچت سے حلوہ تیار کیا ہے۔۔۔
تو آپ رضی اللّٰہ عنہ نے فوراً بیت المال سے اتنا وظیفہ کم کر دیا کہ مجھے اللہ کے حضور جوابدہی سے ڈر لگتا ہے۔۔۔

اپنے اہل و عیال کے لیئے بھی وہی قانون تھا جو ریاست کے لیئے۔۔۔۔

عشر کا باقاعدہ نظام حضرت عمر رضی اللّٰہ عنہ کے دور میں منظم ہوا۔۔۔
فصلوں کا دسواں حصہ اسلامی حکومت کا ہوتا تھا۔۔۔
کنوئیں سے سیراب ہونے والی زمین میں سے بیسواں حصہ تھا۔۔۔
سونے،چاندی اور مالِ تجارت جو نصاب کو پہنچ جاتا،زکوۃ وصول کی جاتی،،
اور یہی وجہ غربت کے خاتمے کا سبب بنی۔۔۔

صرف اندرونی امن و سکون ہی نہیں بلکہ سلطنت اسلامیہ کے دفاع اور پھیلاؤ پر توجہ کا دائرہ کار چہار سو پھیلتا چلا گیا۔۔۔۔
دمشق،یرموک،قادسیہ،مدائن،اور بیت المقدس کی فتح حضرت عمر رضی اللّٰہ عنہ کے سنہرے دور میں ہوئی۔۔۔۔

لشکروں کی روانگی۔۔۔فتوحات کا جائزہ۔۔۔تمام امور کی نگرانی خود کرتے اور خبر گیری کے لیئے بے تاب رہتے۔۔۔۔

پیارے نبی حضرت محمد صلی اللّٰہ علیہ وسلم کے ساتھ تمام غزوات میں شرکت کی اور ساتھ رہے۔۔۔۔

آپ کے دور میں قانون کی عملداری کا یہ عالم تھا کہ رعایا دھوکہ دہی اور خیانت سے ڈرتی اور انصاف کا پہلو نہ چھوڑتی تھی۔۔۔
عمر رضی اللّٰہ عنہ کا لاء یہ تھا کہ:
"مسلمانو!
میں نہ بادشاہ ہوں اور نہ تم غلام۔۔۔
ہم سب ایک ہیں۔۔۔تاہم خلافت کا بار میرے کندھوں پر ہے۔۔۔
میں اگر اس طرح کام کروں کہ تم چین سے رہو۔۔۔اور اپنے گھروں میں آرام سے سوؤ ۔۔۔
تو میرا فرض پورا ہو گیا اور اگر میری خواہش یہ رہے کہ کہ تم میرے دروازے پر حاضری دو یہ میری بد بختی ہو گی۔۔۔
میں تم کو اپنے عمل سے اس بات کی تعلیم دینا چاہتا ہوں۔۔۔۔”
اللہ اکبر۔۔۔ !!!!!!

کیونکہ یہ بات سچ ہے کہ اگر حکمران خود امانتدار،فرض شناس،تقویٰ کا حامل ہو۔۔۔
فکر آخرت اور اللہ کے حضور جوابدہی کے خوف میں مبتلا ہو تو ایسی قوموں کو کوئی شکست نہیں دے سکتا۔۔۔۔
ان کا استحصال کسی فورم پر بھی ممکن نہیں ہوتا۔۔۔
پھر وہاں دولت و رشتہ داری نہیں بلکہ کردار اور اہلیت چلتی ہے۔۔۔۔
ساڑھے دس سال تک وسیع و عریض سلطنت اسلامیہ کا حکمران رہنے والے۔۔۔۔زبانِ نبوت سے بشارتوں کا مژدہ سننے والے۔۔۔
رہتی دنیا تک کو کردار کے ذریعے اصولِ حکمرانی بتلانے والے حضرت عمر رضی اللّٰہ عنہ جب پارسی غلام کے خنجر سے زخمی ہو کر شہادت کے مرتبہ کی طرف بڑھنے لگے تو تاریخ وہاں بھی دنگ رہ جاتی ہے کہ تقویٰ و عاجزی کا یہ عالم تھا کہ پوچھا۔۔۔۔:
میرا قاتل کون ہے ؟
اسے ڈھونڈو۔۔۔۔
حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللّٰہ عنھما نے گھوم کر دیکھا۔۔۔
تو بتایا کہ وہ مغیرہ کا غلام ہے۔۔۔۔۔ !!!
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔(جاری ہے)۔

متعلقہ نعیم شہزاد

.......................... محمد نعیم شہزاد ایک ادبی، علمی اور سماجی شخصیت ہیں۔ لاہور کے ایک معروف تعلیمی ادارہ میں انگریزی زبان و ادب کی تعلیم دیتے ہیں۔ اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں نظم اور نثر نگاری پر قادر ہیں۔ ان کی تحاریر فلسفہ خودی اور خود اعتمادی کو اجاگر کرتی ہیں اور حسرت و یاس کے موسم کو فرحت و امید افزاء بہاروں سے ہمکنار کرتی ہیں۔ دین اسلام اور وطن کی محبت ان کی روح میں بسی ہے۔ اسی جذبے کے تحت ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں پیش پیش رہتے ہیں۔

تجویز کردہ

"حضرت عمر رضی اللّٰہ عنہ” خلیفہ ثانی ۔۔۔. جویریہ چوہدری

پیارے نبی (صلی اللہ علیہ وسلم) کی دعا کا ثمر۔۔۔ ابنِ خطاب حضرت عمر۔۔۔ کیسا …

خلیفہ ثانی حضرت عمر(رضی اللّٰہ عنہ)۔۔۔ !!! (قسط:2)۔۔۔۔۔۔۔۔ جمع و ترتيب : جویریہ چوہدری

حضرت سعد بن ابی وقاص رضی اللہ عنہ جیسے جلیل القدر صحابی جو گورنر تھے، …

Send this to a friend

Hi, this may be interesting you: خلیفۂ ثانی حضرت عمر(رضی اللّٰہ عنہ)۔۔۔ !!!!! (قسط:3)۔ جمع و ترتيب : جویریہ چوہدری! This is the link: https://pakbloggersforum.org/umer-bin-khattab-3/